Calorie Calculator & Tracker

محققین نے خودکشی کی طرف مائل کرنے والے رجحانات کی نشاندہی کر دی

ایمسٹرڈیم (ویب ڈیسک) یورپین کالج آف نیورو سائیکو فارماکالوجی سے وابستہ محققین نے انکشاف کیا ہے کہ ایسے افسردہ افراد جن کے خیالات میں ہیجان اور اضطراب پایا جاتا ہو ان میں سے 50 فیصد میں خودکشی کے رجحانات پائے جاتے ہیں۔ تحقیق میں مزید کہا گیا ہے کہ اس قسم کے رویے خودکشی کی بہت سی کوششوں کا پیش خیمہ ثابت ہوتے ہیں۔

محققین نے تحقیق کے دوران 2ہزار 811 ذہنی دباﺅ میں مبتلا مریضوں کا تجزیہ کیا۔ ان میں سے 628 افراد ایسے بھی تھے جو ماضی میں خودکشی کرنے کی ناکام کوشش کر چکے تھے۔ محققین نے خاص طور پر آخرالذکر افراد کا تجزیہ کیا تو انہیں معلوم ہوا کہ خودکشی کی کوشش کرنے سے پہلے ایک خاص قسم کا رویہ بار بار ظاہر ہوتا ہے۔

محققین کا کہنا ہے کہ خودکشی کرنے کا خطرہ اس وقت 50 فیصد زیادہ ہو جاتا ہے جب کوئی ذہنی دباو¿ میں مبتلا شخص لاپروائی سے ڈرائیونگ کرے یا پھر متعدد لوگوں سے جنسی تعلق رکھے۔

محققین کے مطابق کسی شخص کا عصبی اضطراب میں مبتلا ہونا یعنی کمرے میں بار بار چکر لگانا، ہاتھ بار بار ملنا خودکشی کی طرف مائل کرنیوالی علامات ہیں۔ اسی طرح اضطراری حالت مثلاً کسی شخص کا کسی عمل کے مضمرات کے بارے میں سوچے بغیر اس میں کود پڑنا بھی خطرناک رجحان ہے۔

محققین کے مطابق ڈپریشن کے مریضوں میں خودکشی کی کوششوں سے قبل اس قسم کی گڈمڈ علامات اکثر پائی جاتی ہیں۔ ان گڈمڈ علامات میں ڈپریشن کے ساتھ ساتھ جوش اور جنون کی ملی جلی کیفیات شامل ہوتی ہیں

Comments

comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*