Calorie Calculator & Tracker

چینی سائنسدان سمندری چاول کی اعلیٰ پیداوار کی قسم تیار کریں گے

سانیا(مانیٹرنگ ڈیسک )چین کے چاول کے ممتاز سائسندان یوان نائونگ پنگ زیادہ پیداوار والے نئے ”سمندری چاول” کی قسم کی کاشت پر تحقیق کی قیادت کر رہے ہیں ۔ تحقیقی ٹیم ایک ایسی اقسام کی تیاری پر تین سال صرف کرنے کا ارادہ رکھتی ہے جو 0.8فیصد تک کے شور والے پانی کو برداشت کر سکے اور جس کی پیداوار 300کلوگرام فی ایم یو (ایک چینی یونٹ جو کہ 666مربع میٹر کے مساوی ہے) سے زائد پیداوار دے سکے ۔ یہ بات یوان نے جو کہ ”بابائے ہائی برڈ چاول”کے طور پر جانے جاتے ہیں شمالی صوبہ ہینان کے شہر سانیا میں ایک سیمینار کے دوران بتائی ۔ یوان نے کہا کہ دنیا کی آبادی کے نصف سے زیادہ کا انحصار پسدیدہ خوراک کے طور پر چاول پر ہے جبکہ چین میں اس کا تناسب 60فیصد سے زیادہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چین میں سیم اور تھور زدہ ایک بلین ایم یو سے زائد اراضی ہے اور اس قسم کی زمین کو انتہائی تھور والی برداشت والے سمندری چاول کا بیچ تیار کر کے قابل کاشت اراضی میں تبدیل کرنے میں انتہائی اہمیت کا حامل ہو گا ۔ 100ملین ایم یو اراضی کو سمندری چاول کی پیداوار کے لئے استعمال کرنے سے ملک 30بلین کلو گرام فاضل چاول پیدا کر سکتا ہے اور مزید 80ملین افراد کو خوراک باہم پہنچا سکتا ہے ۔ سمندری چاول بسا اوقات ایسے سنگموں پر جہاں دریا اور سمندر آپس میں ملتے ہیں سیم اور تھور زدہ اراضی میں پائے جاتے ہیں ۔یہ پودہکیڑوں مکوڑوں بیماریوں نمک اور الکلی کی مزاحمت کرتا ہے اوراس کے لئے کیمیاوی کھاد کی ضرورت نہیں پڑتی ہے ۔ چین میں سمندری چاول انتہائی جدید قسم کی پیدوار اس وقت 400کلوگرام فی ایم یو ہے تاہم یہ صرف ایسے پانی میں اگایا جا سکتا ہے جہاں 0.3فیصد سے کم سیم ہو ۔

Comments

comments