Calorie Calculator & Tracker

بھارت، ڈاکٹرز کی طرف سے غلطی سے مردہ قرار دئے جانے کے بعد 24 سالہ دلہن کی چتا جلادی گئی

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک ) بھارت میں24سالہ دلہن رچنا سسوڈیا کو ڈاکٹرز کی طرف سے غلطی سے مردہ قرار دئے جانے کے بعد اس کی چتا جلادی گئی ، گریٹر نوئیڈا کے ہسپتال میں ڈاکٹر کی جانب سے پھیپھڑوں کی انفکشن میں مبتلا خاتون کو مردہ قرار دیا گیا تھا۔رپورٹس کے مطابق رچنا کے شوہر دیویش چودھری اپنے دوست کے ساتھ اس کی نعش شمشان گھاٹ لے گئے مگر آخری رسومات کے دوران نعش کو اس وقت جلتی آگ سے باہر نکال لیاگیا جب کسی نے دعویٰ کیا کہ رچنا زندہ ہے۔ آگ سے باہر نکالنے کے بعد رچنا کے زندہ رہنے کے کوئی آثار دیکھے نہیں گئے مگر پوسٹ مارٹم کی رپورٹ سے ثابت ہوا ہے کہ اس کی موت پھیپھڑوں کے مرض کی وجہ سے نہیں بلکہ جلائے جانے کی وجہہ سے ہوئی ہے ۔ سینئر پولیس سپریڈنٹ راجیش پانڈے نے میڈیا سے کہاکہ خاتون کے جسم سے اس قسم کے ذرات ملے ہیں جو سانس کے ذریعہ اندر گئے۔اگر کوئی شخض مرا ہوتا ہے تو ایسے ذریعہ پھیپھڑوں یا سانس کی نالی سے جسم کے اندر نہیں جاسکتے۔ رچنا کے انکل کیلاش سنگھ نے اس کے شوہر اور دس دیگر افراد پر رچناکو قتل کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ڈاکٹر پنکچ مشراء جنھوں نے رچناکا پوسٹ مارٹم کیا نے کہاکہ نعش اسی عورت کی ہے پہچان کرنا مشکل ہے کیونکہ وہ 70فیصد جھلسی ہوئی حالت میں ہے۔ڈاکٹرز نے رچنا کے جسم سے ڈی این اے کے ذریعہ شناخت کی غرض سے نمونہ حاصل کر لیا ہے

Comments

comments